گاسپل ٹریکٹ اور بائبل سوسائٹی

بائبل ٹریکٹ اور بائبل سوسائٹی کی طرف سے آپکا خیر مقدم ۔ بائبل ٹریکٹ اور بائبل سوسائٹی کا نصب العین ہے کہ دُنیا بھر میں مسیح میں ایمان کے ذریعہ فضل سے نجات کی خوُشخبری بانٹی جاۓ اور اِس طرح سے یسوُع کے حُکم کی تعمیل کی جاۓ ۔


درُست فیصلے کرنے کی للکار

زِندگی  کئی  بار  اِنسان  کو  ایسے  مقام  پر  لے  آتی  ہے  جہاں  اُسے   کوئی  بڑا  اہم  فیصلہ  کرنا  ہوتا  ہے  ۔  حقیقت  تو  یہ  ہے  کہ  ہمیں  ہر  روز   کئی  فیصلے  کرنا  پڑتے  ہیں  ۔  کُچھ  فیصلے  زیادہ  سوچ  و  بچار  کے  بغیر  ہی  کر  لِۓ  جاتے  ہیں  ۔  تاہم  کُچھ  فیصلوں  کے  لِے  بُہت  غور  و  فِکر  درکار  ہوتا  ہے  اور   بڑے  فیصلے  کرنے  میں  بڑا  احتیاط  برتا  جاتا  ہے  ۔  اب  سوال  یہ  اُٹھتا  ہے  کہ   کوئی  فیصلہ  کرتے  وقت  کِس  بات  کو  سب  سے  زیادہ  اہم  سمجھا  جانا  چاہۓ  ؟

ایک خُوشگوا ر گھرانہ گھر پیارا گھر

گھر  پیارا  گھر 

بائبل  مُقدس  ہمیں  ایک  خُوبصُورت  گھر  کا  نمُونہ  اور  خاکہ  پیش  کرتی  ہے  ،  جو  کہ  ساخت  میں  مظبُوط  ہے  اور  اِسکا  ماحول  نہائت  ہی  خُوشگوار  ہے  ۔  گھر   ہم  آہنگی  اور  سکوُن  و  اِطمینان  کا  مقام  ہو  سکتا  ہے  یا  یہ  ذہنی  اذِیئت  اور   لڑائی  جھگڑے   کا   نمُونہ  بن  سکتا  ہے  ۔  کیا  آپکا  گھرانہ  خُوشخال  اور  پُرمُسرت    ہے  ؟  اور  کیا  یہ  مُشکِل  اور  نامساعد  حالات  کا  مُقابلہ  کر  سکتا  ہے  ؟       

 گھرانہ  ایک  اہم  سماجی  اَکائی  ہے  ۔  اور  یہ  ہماری  روحانی  تعمیر  ،  جزباتی  خُوشیوں  اور  مادی  و  جسمانی  ضروُرِیات  کی  تکمیل  کے  لِۓ  خُدا   کی  طرف  سے  قائم  کیا  گیا   ہے  ۔  خُدا  کا   ہمیشہ  سے  یہ  منصُوبہ   رہا  ہے   کہ  خاندان  کے  تمام  ا فراد    ایک  دوسرے  کے  لِۓ  خُوشی  کا  باعث  بنیں  اور  ایک  دُوسرے  کے  ساتھ  ہم  آہنگی  کے  ساتھ  رہیں  ۔  

اڑتالِیس ( ۴۸ ) گھنٹے دوزخ میں

ہسپتال  میں  کِسی  مریض  کے  recusitation    یعنی  مرتے  ہوّۓ  شخص  کو  مصنوُعی  طریقہ  سے  جانبر  کرنے  کی   کوشِش  کرنے  کا  سب  سے  دِلچسپ   اور  عجیب   و  غریب  واقعہ  جو  میرے  عِلم  میں  لایا   گیا  ،  وُہ   جیفرسن  کاؤنٹی  کے   بدنام ِ  زمانہ  چور  جارج  لینکس ؔ  کا  ہے  ۔  وُہ  اپنی   سزا  کی  دوُسری  ٹرم  پوُری  کر  رہا   تھا  ۔  پہلی  بار  اُسے  سیجو ِّک ؔ  کاؤنٹی  نے  گھوڑے  چُرانے  پر  جیل  بھیجا  تھا  ۔    

 

ٔ۱۸۸۷   ٔ  تا  ۱۸۸۸   ٔ  کے  درمیان  تک  وہ  کوئلے  کی  کانوں  میں  کام  کرتا  رہا  تھا  ۔  جِس  جگہ  وُہ  محنت  و   مُشقت  کرتا  وُہ  جگہ  اُسے  بہت  خطرناک  محسوُس   ہوتی  ۔  اُس  نے  صُورتِ حال  کی  گھمبیرتا  کو  دیکھتے  ہوُۓ  اپنے  افسرِبالا  سے  اپنے  خدشات  کا  ذِکر  کیا  ۔  متعلقہ  افسر  نے  اُسکے  کام  کی  جگہ  کا  جائزہ  لینے  کے  بعد  اپنا  فیصلہ  سُناتے  ہوّۓ  لینکسؔ  کو  واپس  کام  پر  جانے  کا  حُکم  دِیا  ۔   مُجرم  حُکم  کی  تعمیل  کرتے  ہوُۓ  واپس  اپنے  کام   میں  لگ  گیا  ۔  اُسے  کام  کرتے  ہوُۓ  ابھی  ایک  گھنٹہ  ہی  گُزرا   تھا   کہ  کان  کی  چھت  گِر  گئی  اور  وُہ  پتھروں  کے  بوجھ   کے  نیچے  دو  گھنٹوں  تک  دبا  رہا  ۔ 

آسمان آپکا مُستقبِل کا گھر ؟

آپکا  مُستقبِل  کیسا  ہو گا  ؟

کون  اپنے  مُستقبِل  کے  بارے  سوچ  سکتا  ہے  بغیر  اِس  بات  کو   خاطِر  میں  لاۓ  کہ  کیا  موت  کے  بعد  بھی    حیّات  ہے  ؟  اِنسان  اپنے  ذہن  سے  موت  کے  بعد  کے  مُمکِنہ  احوال  کے  خیالات   سے  چھُٹکارا  نہیں  پا   سکتا  لیکِن  اُسکی  کوشِش  ضروُر   ہوتی  ہے  کہ  وُہ  اِن  خیالات  کو  اپنے  ذہن  سے  نِکال  باہر  کرے  ۔   وُہ  موت  ،  جنت  اور  جہنم   کے   خیالات  کو   کہیں  دُور  مُستقبِل  میں  ڈال  کر   اپنے  آپ  کو  اِس  زِندگی  کے  مُعاملات  میں  مصروُف  کر  لیتا  ہے  ۔  (  متیؔ  ۲۴      ۴۸   ؛  واعظ ؔ  ۸      ۱۱    )  لیکِن  سچائی  تو   یہ  ہے  کہ   بہ دیر  یا  جلد  ہمیں  ایک  اِنتخاب  تو  کرنا   ہی  ہے  ۔  اگر  ہم  اِس  سوال  کے  بارے  نہیں  سوچتے  تو  ہم  یقیناً  ہمیشہ  کے  لِۓ  بھٹک  چُکے  ہیں  ۔